اهل البيت

اسلامي احاديث خطب ادعية
 
الرئيسيةاليوميةس .و .جبحـثالأعضاءالمجموعاتالتسجيلدخول

شاطر | 
 

 نهج البلاغہ حكمت

استعرض الموضوع السابق استعرض الموضوع التالي اذهب الى الأسفل 
كاتب الموضوعرسالة
Admin
Admin
avatar

المساهمات : 618
تاريخ التسجيل : 21/04/2016

مُساهمةموضوع: نهج البلاغہ حكمت    السبت يوليو 30, 2016 10:14 am

بسم الله الرحمن الرحيم

حکمت 3 :
وَ قَالَ [عليه السلام] الْبُخْلُ عَارٌ وَ الْجُبْنُ مَنْقَصَةٌ وَ الْفَقْرُ يُخْرِسُ الْفَطِنَ عَنْ حُجَّتِهِ وَ الْمُقِلُّ غَرِيبٌ فِى بَلْدَتِهِ .
بخل ننگ و عار ہے اور بزرگی منفقت ۔فقر ہوشمند کو بھی اس کی حجت کے لئے گونگا بنادیتا ہے اور مفلس آدمی اپنے وطن میں بھی غریب ہوتا ہے"۔

یہ ایک اجتماعی حقیقت ہے کہ فقرو فاقہ انسان کو خاموش بنا دیتے ہیں اور کوئی شخص فقیر کی بات سننے کو تیار نہیں ہوتا ہے اس کے علاوہ وہ غربت انسان کو اپنے ہی شہر میں ایسا اجنبی بنا دیتی ہے کہ لوگ پہچاننے سے انکار کردیتے ہیں

حکمت 4 :
وَ قَالَ [عليه السلام] الْعَجْزُ آفَةٌ وَ الصَّبْرُ شَجَاعَةٌ وَ الزُّهْدُ ثَرْوَةٌ وَ الْوَرَعُ جُنَّةٌ وَ نِعْمَ الْقَرِينُ الرِّضَى .
عاجزی آفت ہے اور صبر شجاعت ، زہد ثروت ہے اور پرہیز گاری سپر۔انسان کا بہترین ساتھی رضائے الٰہی پر راضی رہنا ہے"۔

یعنی عاجزی انسان کو بیکار بنا دیتی ہے اور صبر اس میں حوصلہ پیدا کراتا ہے۔دنیا سے بے نیازی خود ایک دولت ہے اور پرہیز گاری دنیا کی ذلت اور آخرت کے عذاب سے بچانے کی بہترین سپر ہے۔رضائے الٰہی سے بہتر کوئی ساتھی اور مصاحب نہیں ہے جو ہمیشہ ساتھ رہنے والا ہے ۔

حکمت 5 :
وَ قَالَ [عليه السلام] الْعِلْمُ وِرَاثَةٌ كَرِيمَةٌ وَ الْآدَابُ حُلَلٌ مُجَدَّدَةٌ وَ الْفِكْرُ مِرْآةٌ صَافِيَةٌ .
علم بہترین وراثت ہے اور آداب نوبہ نو لباس ہیں اور فکر بہترین شفاف آئینہ ہے۔"
انسان علم سے بہتر کوئی ترکہ چھوڑ کر نہیں جاتا ہے اور آداب سے بہتر کوئی لباس نہیں ہے جو زمانہ کے حالات کے اعتبارسے بدلتا رہتا ہے ۔فکر انسان کے معلومات کا بہترین وسیلہ ہے جس طرح شفاف آئینہ میں شکل دیکھی جاتی ہے۔

حکمت 6 :
وَ قَالَ [عليه السلام] صَدْرُ الْعَاقِلِ صُنْدُوقُ سِرِّهِ وَ الْبَشَاشَةُ حِبَالَةُ الْمَوَدَّةِ وَ الِاحْتِمَالُ قَبْرُ الْعُيُوبِ وَ رُوِيَ أَنَّهُ قَالَ فِى الْعِبَارَةِ عَنْ هَذَا الْمَعْنَى أَيْضاً الْمَسْأَلَةُ خِبَاءُ الْعُيُوبِ وَ مَنْ رَضِيَ عَنْ نَفْسِهِ كَثُرَ السَّاخِطُ عَلَيْهِ .

عاقل کا سینہ اسرار کا خزینہ ہے اور بشارت محبت کا جال ہے اور تحمل و بردباری عیوب کا مدفن ہے اور صلح و صفائی عیوب کے چھپانے کا ذریعہ ہے۔

حکمت 7 :
وَ قَالَ [عليه السلام] وَ الصَّدَقَةُ دَوَاءٌ مُنْجِحٌ وَ أَعْمَالُ الْعِبَادِ فِى عَاجِلِهِمْ نُصْبُ أَعْيُنِهِمْ فِى آجَالِهِمْ .
"صدقہ بہترین کارآمد دوا ہے اور لوگوں کے دنیا کے اعمال آخرت میں ان کی نگاہوں کے سامنے ہوں گے"

حکمت 8 :
وَ قَالَ [عليه السلام] اعْجَبُوا لِهَذَا الْإِنْسَانِ يَنْظُرُ بِشَحْمٍ وَ يَتَكَلَّمُ بِلَحْمٍ وَ يَسْمَعُ بِعَظْمٍ وَ يَتَنَفَّسُ مِنْ خَرْمٍ .
انسان کی ساخت پر تعجب کروکہ چربی کے ذریعہ دیکھتا ہے اورگوشت سے بولتا ہے اور ہڈی سے سنتا ہے اور سوراخ سے سانس لیتا ہے

حکمت 9 :
وَ قَالَ [عليه السلام] إِذَا أَقْبَلَتِ الدُّنْيَا عَلَى أَحَدٍ أَعَارَتْهُ مَحَاسِنَ غَيْرِهِ وَ إِذَا أَدْبَرَتْ عَنْهُ سَلَبَتْهُ مَحَاسِنَ نَفْسِهِ .
جب دنیاکسی کی طرف متوجہ ہو جاتی ہے تو یہ دوسرے کے محاسن بھی اس کے حوالہ کردیتی ہے اور جب اس سے منہ پھراتی ہے تو اس کے محاسن بھی سلب کر لیتی ہے۔"

حکمت 10 :
وَ قَالَ [عليه السلام] خَالِطُوا النَّاسَ مُخَالَطَةً إِنْ مِتُّمْ مَعَهَا بَكَوْا عَلَيْكُمْ وَ إِنْ عِشْتُمْ حَنُّوا إِلَيْكُمْ
وگوں کے ساتھ ایسا میل جول رکھوکہ مرجاؤ تو لوگ گریہ کریں اور زندہ رہو تو تمہارے مشتاق رہیں۔

حکمت 11 :
وَ قَالَ [عليه السلام] إِذَا قَدَرْتَ عَلَى عَدُوِّكَ فَاجْعَلِ الْعَفْوَ عَنْهُ شُكْراً لِلْقُدْرَةِ عَلَيْهِ .
جب دشمن پر قدرت حاصل ہو جائے تو معاف کردینے ہی کو اس قدرت کا شکریہ قرار دو۔

حکمت 12 :
وَ قَالَ [عليه السلام] أَعْجَزُ النَّاسِ مَنْ عَجَزَ عَنِ اكْتِسَابِ الْإِخْوَانِ وَ أَعْجَزُ مِنْهُ مَنْ ضَيَّعَ مَنْ ظَفِرَ بِهِ مِنْهُمْ .
عاجز ترین انسان وہ ہے جو دوست بنانے سے بھی عاجز ہو اور اس سے زیادہ عاجز وہ ہے جو رہے سہے دوستوں کوبھی برباد کردے"

حکمت 13 :
وَ قَالَ [عليه السلام] إِذَا وَصَلَتْ إِلَيْكُمْ أَطْرَافُ النِّعَمِ فَلَا تُنَفِّرُوا أَقْصَاهَا بِقِلَّةِ الشُّكْرِ .

حکمت 14 :
وَ قَالَ [عليه السلام] مَنْ ضَيَّعَهُ الْأَقْرَبُ أُتِيحَ لَهُ الْأَبْعَدُ .
جسے قریب والے چھوڑ دیتے ہیں اسے دور والے مل جاتے ہیں۔


حکمت 15 :
وَ قَالَ [عليه السلام] مَا كُلُّ مَفْتُونٍ يُعَاتَبُ .
میں پڑ جانے والا قابل عتاب نہیں ہوتا ہے

حکمت 16 :
وَ قَالَ [عليه السلام] تَذِلُّ الْأُمُورُ لِلْمَقَادِيرِ حَتَّى يَكُونَ الْحَتْفُ فِى التَّدْبِيرِ .
سارے معاملات تقدیر کے تابع ہوتے ہیں یہاں تک کہ کبھی کبھی تدبیر سے موت واقع ہو جاتی ہے۔

حکمت 17 :
وَ سُئِلَ [عليه السلام] عَنْ قَوْلِ الرَّسُولِ ص غَيِّرُوا الشَّيْبَ وَ لَا تَشَبَّهُوا بِالْيَهُودِ فَقَالَ ع إِنَّمَا قَالَ ص ذَلِكَ وَ الدِّينُ قُلٌّ فَأَمَّا الْآنَ وَ قَدِ اتَّسَعَ نِطَاقُهُ وَ ضَرَبَ بِجِرَانِهِ فَامْرُؤٌ وَ مَا اخْتَارَ .
سے رسول اکرم کے اس ارشاد کے بارے میں سوال کیا گیا کہ ” ضعیفی کو خضاب کے ذریعہ بدل دو اورخبردار یہودیوں کی شبیہ نہ بنو“تو آپ نے فرمایا کہ یہ اس دور کے لئے ہے جب دیندار کم تھے لیکن آج اسلام کا دائرہ وسیع ہو چکا ہے اور وہ سینہ ٹیک کرجم چکا ہے لہٰذا ہر انسان کو اپنی پسند سے کام کرنا چاہیے ۔

حکمت 18 :
وَ قَالَ [عليه السلام] فِى الَّذِينَ اعْتَزَلُوا الْقِتَالَ مَعَهُ خَذَلُوا الْحَقَّ وَ لَمْ يَنْصُرُوا الْبَاطِلَ .
میدان جنگ سے کنارہ کشی کرنے والوں کے بارے میں فرمایا کہ ” ان لوگوں نے حق کو بھی چھوڑدیا اورباطل کی بھی مدد نہیں کی ۔

1

Be cheerful!

البشاشة حبالة المودة.

خوشروئی محبت کا جال ہے۔ (حکمت/۵)

An open and pleasant countenance gets more friends.

2


Grant pardon [your adversary]

اذا قدرت علي عدوك فاجعل العفو عنه شكرا للقدرة عليه.

جب دشمن پر قدرت حاصل ہو جائے تو معاف کردینے ہی کو اس قدرت کا شکریہ قرار دو۔

(حکمت/۱۰)

When you get an opportunity and power over your adversary forgive him in thankfulness to God for being able to overpower him.


3

Have a high ambition

قدر الرجل علي قدر همته.

انسان کی قدر و قیمت اس کے ہمت کے اعتبار سے ہوتی ہے ۔ (حکمت/۴۴)

The worth of a man is according to his courage and ambition.


4

Have foresight

الظفر بالحزم و الحزم بأجالة الرأي و الرأي بتحصين الأسرار.

کامیابی دوراندیشی سے حاصل ہوتی ہے اور دوراندیشی فکر و تدبر سے ۔ فکر و تدبر کا تعلق اسرار کی رازداری سے ہے ۔ (حکمت/۴۵)

Success is the result of foresight; foresight depends upon deep thinking; and careful planning by guarding the secrets.



5

Do more good in answer to the goodness

اذا حييت بتحية فحي بأحسن منها.

جب تمھیں کوئی تحفہ دیا جائے تو اس سے بہتر واپس کرو۔ (حکمت/۵۹)

If you are met with a greeting, give better greetings in return.

6

Be of a high moral

لا قرين كحسن الخلق.

حسن اخلاق جیسا کوئی ساتھی نہیں ہے ۔ (حکمت/۱۰۹)

No companion is like the goodness of moral character.


7

Make the most of your opportunities

اضاعة الفرصة غصة.

فرصت کا ضائع کردینا رنج و اندوہ کا باعث ہوتا ہے ۔ (حکمت/۱۱۴)

To miss an opportunity brings about grief.



8

Follow frugality

ما عال من اقتصد.

جو میانہ روی سے کام لے گا وہ محتاج نہ ہوگا۔ (حکمت/۱۳۴)

He who practices moderation and frugality does not become destitute.



9

Recognize people through their words

تكلموا تعرفوا فأن المرء مخبوء تحت لسانه.

بولو تاکہ پہچانے جأواس لئے کہ انسان کی شخصیت اس کی زبان کے نیچے چھپی رہتی ہے (حکمت/۳۸۴)

Speak so that you may be known, since man is hidden under his tongue (sayings).



10

Realize your worth

هلك امروء لم يعرف قدره.

جس شخص نے اپنی قدر و منزلت کو نہیں پہچانا وہ ہلاک ہو گیا ۔(حکمت/۱۴۱)

He who does not know his worth is condemned to be ruined.

11

Make friends with others

التودد نصف العقل.

میل و محبت پیدا کرنا عقل کا نصف حصہ ہے۔ (حکمت/۱۳۵)

To win the friendship of people is half of wisdom.



12

Respond badness with goodness

عاتب أخاك بالأحسان اليه واردد شره بالأنعام عليه.

اپنے بھائی تنبیہ کرو تو احسان کرنے کے بعد اور اس کے شر کا جواب دو تو لطف وکرم ے ذریعہ ۔(حکمت/۱۵۰)

Admonish your brother (comrade) by good behavior towards him, and ward off his evil by forgiving him.

13

Consult others in your doings

من شاور الرجال شاركها في عقولها.

جو لوگوں سے مشورہ کرے گا وہ ان کی عقلوں مٰں شریک ہو جائے گا۔ (حکمت/۱۵۲)

One who consults other people shares in their understanding (reason).

14

Do not reveal your secret to the other

من كتم سره كانت الخيرة بيده.

جو اپنے راز کو پوشیدہ رکھے گا اس کا اختیار اس کے ہاتھ میں رہے گا۔ (حکمت/۱۵۳)

One who guards his secrets has complete control over his affairs.


15

Keep liberality

آلة الرياسة سعة الصدر.

ریاست کا وسیلہ وسعت صدر ہے ۔ (حکمت/۱۶۷)

The means to secure high authority is breadth of chest (liberality, generosity).



16

Keep away from the seditions

لا مرحبا بوجوه لا تري الا عند كل سوأة.

ان چہروں پر پھٹکارہو جو صرف برائی اور رسوائی کے وقت نظر آتے ہیں (حکمت/۱۹۱)

Woe to the faces that who are not seen but on foul occasions.



17

Be patient!

اول عوض الحليم من حلمه ان الناس انصاره علي الجاهل.

صبر کرنے والے کا اس کی قوت برداشت پر پہلا اجر یہ ملتا ہے کہ لوگ جاہل کے مقابلہ میں اس کے مددگار ہو جاتے ہیں(حکمت/۱۹۷)

The first reward the exerciser of forbearance gets is that people become his helpers against the ignorant.



18

Do not dispute

الخلاف يهدم الرأي.

مخالفت صحیح رائے کو بھی برباد کر دیتی ہے (حکمت/۲۰۶)

Disputation removes good management.

19

Recognize people when occasions change.

في تقلب الاحوال علم جواهر الرجال.

لوگوں کے جوہر حالات کے انقلاب میں پہچانے جاتے ہیں(حکمت/۲۰۸)

Through change of circumstances the mettle of men is known.

20

Have modesty!

من كساه الحياء ثوبه لم يرالناس عيبه.

جسے حیا نے اپنا لباس اوڑھا دیا اس کے عیب کو کوئی نہیں دیکھ سکتا ہے (حکمت/۲۱۴)

Whomever modesty cloths with dress, people would not see his defects.




21
Keep silent!

بكثرة الصمت تكون الهيبه.

زیادہ خاموشی ہیبت کا سبب بنتی ہے (حکمت/۲۱۵)

Excess of silence will bring respect and dignity.



22

Do not commit treachery!

من ظن بك خيرا فصدق ظنه.

جو تمھارے بارے میں اچھا خیال رکھتا ہو اس کے خیال کو سچا کر کے دکھلا دو۔ (حکمت/۲۴۰)

If a person has a good idea about you, make his idea true [with honesty].



23

Keep away from envy!

صحة الجسد من قلة الحسد.

بدن کی صحت کا ایک ذریعہ حسد کی قلت بھی ہے (حکمت/۲۴۸)

Health of the body comes from paucity of envy.

24

Keep moderate in friendship and enemity

احبب حبيبك هونا ما عسي ان يكون بغيضك يوماً ما و ابغض بغيضك هونا ما عسي ان يكون حبيبك يوما ما.

اپنے دوست سے ایک محدود حد تک دوستی کرو،کہیں ایسا نہ ہو کہ ایک دن دشمن ہو جائے اور دشمن سے بھی ایک حد تک دشمنی کرو شائد ایک دن دوست بن جائے۔ (حکمت/۲۶۰)

Have love for your friend to a limit, for it is possible that he may turn into your enemy some day; and hate your enemy up to a limit, for it is possible that he may turn into your friend some day.


25

Do not keep company with the stupid!

لا تصحب المائق، فانه يزين لك فعله و يود ان تكون مثله.

بیوقوف کی صحبت مت اختیار کرنا کہ وہ اپنے عمل کو خوبصورت بنا کر پیش کرے گا اور تم سے بھی ویسے ہی عمل کا تقاضا کرے گا (حکمت/۲۸۵)

Do not associate with a fool because he will beautify his actions before you and likes that you too be like him.

26

Ask for knowing

سل تفقها و لا تسأل تعنتا.

سمجھنے کے لئے دریافت کرو ،الجھنے کے لئے سوال مت کرو (حکمت/۳۱۲)

Ask me for understanding but do not ask me for getting confusion.




27
Abstain from guilt even in private

اتقوا معاصي الله في الخلوات فأن الشاهد هو الحاكم.

تنہائی میں بھی خدا کی نافرمانی سے ڈرو کہ جو دیکھنےوالا ہے وہی فیصلہ کرنے والا ہے (حکمت/۳۱۶)

Beware of disobeying Allah in solitude because the witness (of that situation) is also the judge.


28

Do not commit an error so that not to have to excuse

الاستغناء عن العذر اعز من الصدق به.

عذر و معذرت سے بے نیازی سچے عذر پیش کرنے سے بھی زیادہ عزیز ترہے (حکمت/۳۲۱)

Not to be in need of putting forth an excuse is better than putting forth a true excuse.


29

Thank God for His blessings by obeying Him

اقل ما يلزمكم الله ان لا تستعينوا بنعمه علي معاصيه.

كمترين حقي كه از خداوند بر گردن شماست آن است كه از نعمتهايش در راه انجام گناه ياري نگيريد. (حکمت/۳۲۲)

The least right of Allah on you is that you should not make use of His favors in committing His sins.



30

Do regard as small no sin

اشد الذنوب ما استهان به صاحبه.

سب سے سخت گناہ وہ ہے جسے گناہگار ہلکا قرار دیدے (حکمت/۳۴۰)

The most serious sin is that which the doer considers light.

31

Do not say whatever you know

لا تقل ما لا تعلم بل لا تقل كل ما تعلم.

جو بات نہیں جانتے ہو اسے زبان سے مت نکالو بلکہ بلکہ ہر وہ بات جسے جانتے ہو اسے بھی مت بیان کرو(حکمت/۳۷۴)

Do not say what you do not know; rather do not say whatever you know, too.


32

Do respect your parents and teacher

لا تجعلن ذرب لسانك علي من انطقك.

اپنی زبان کی تیزی کو اسکے خلاف استعمال نہ کرو جس نے تمھیں بولناسکھایا ہے (حکمت/۴۰۳)

Do not try the sharpness of your tongue against Him who gave you the power to speak, or the eloquence of your speaking against him who set you on the right path.



33

Do good, however small it is

افعلوا الخير و لا تحقروا منه شيئا.

نیکیاں انجام دو اور اس میں سے کسی چیز کو بھی حقیر نہ سمجھو (حکمت/۴۱۴)

Do good and do not regard any part of it small, because its small is big and its little is much.


34

Do not sleep a lot

ما انقض النوم لعزائم اليوم.

رات کی نیند دن کے عزائم کو کس قدر کمزور بنا دیتی ہے (حکمت/۴۳۳)

What a breaker is sleep for resolutions of the day.



35

Do not pride yourself!

ما لابن آدم والفخر، اوله نطفه و آخره جيفه.

آخر فرزند آدم کا فخر و مباہات سے کیا تعلق جب کہ اس کی ابتدا نطفہ ہے اور انتہا مردار (حکمت/۴۴۵)

What has a man to do with vanity! His origin is semen and his end is a carcass while he cannot feed himself nor ward off death.





36

Do not backbite the others!

الغيبة جهد العاجز.

غیبت کرنا کمزور آدمی کی آخری کوشش ہوتی ہے (حکمت/۴۵۳)

Backbiting is the tool of the helpless.



37

Get the advices of the time

ما اكثر العبر و اقل الاعتبار.

عبرتیں کتنی زیادہ ہیںاور اس کے حاصل کرنے والے کتنےکم ہیں(حکمت/۲۸۹)

How many are the objects of lessons but how few the taking of lessons.





38

Avoid to be lazy

من اطاع التواني ضيع الحقوق.

جو آدمی سستی اور کاہلی سے کام لیتا ہے وہ اپنے حقوق کو بھی برباد کر دیتا ہے۔ (حکمت/۲۳۱)

One who is lazy and lethargic loses rights and dues.


39

Do not follow the talebearer

من اطاع الواشي ضيع الصديق.

جو چغل خور کی بات مان لیتا ہے وہ دوستوں کو بھی کھو بیٹھتا ہے(حکمت/۲۳۱)

He who believes in the backbiter loses his friend.

40

Do not be covetous!

الطامع في وثاق الذل.

لالچی ہمیشہ ذلت کی قید میں گرفتار رہتا ہے (حکمت/۲۱۷)

A greedy man is always captivated by disgrace.

الرجوع الى أعلى الصفحة اذهب الى الأسفل
معاينة صفحة البيانات الشخصي للعضو http://duahadith.forumarabia.com
 
نهج البلاغہ حكمت
استعرض الموضوع السابق استعرض الموضوع التالي الرجوع الى أعلى الصفحة 
صفحة 1 من اصل 1

صلاحيات هذا المنتدى:لاتستطيع الرد على المواضيع في هذا المنتدى
اهل البيت :: الفئة الأولى :: quran dua hadith in urdu باللغة الباكستان :: نهج البلاغة-
انتقل الى: